بیوی سے عشق کب ہوتا ہے

یہ تحریر ضرور پڑھئیے یہ تحیر آپ کو بہت کچھ سوچنے پر مجبور کر دے گی بیوی سے عشق کب ہوتا ہے؟ یہ جاننے کے لیے یہ تحریر ضرو پڑھیںایک خاتون نے نہایت دلچسپ سوال کیا، کہنے لگیں ’’تارڑ صاحب میں نے آپ کا حج کا سفرنامہ ’’منہ ول کعبے شریف‘‘ پڑھا ہے جس میں آپ نے اپنی بیوی کا تذکرہ کچھ اس طرح کیا ہے جیسے وہ آپ کی بیگم نہ ہوں گرل فرینڈ ہوں. میں نے ہنستے ہوئے کہا کہ ’’عورت جب میں اپنے سفرناموں میں غیرمنکوحہ خواتین کا زکر کرتا تھا تب بھی لوگوں کو اعتراض ہوتا تھا اور اب اگر اپنی بیوی کے ساتھ چہلیں کرتا ہوں تو بھی اعتراض ہوتا ہے. حد سے زیادہ خوبصوری شوہر کو لے ڈوبی ،بیوی کا ایسا قدام کہ جان کر آپ کے ہوش..

اگر آخری عمر میں بالآخر اپنی بیوی کے عشق میں مبتلا ہو گیا ہوں تو بھی آپ کو قبول نہیں.وہ عورت نہایت پُرمسرت انداز میں کہنے لگیں ’’آخری عمر میں ہی کیوں؟ میں نے انہیں تو جواب نہیں دیا لیکن مسکرا دیا لیکن میں آپ کو رازداں بناتا ہوں. آخری عمر میں نیگم کے عشق میں مبتلا ہو جانا ایک مجبوری ہے کہ اتنی لمبی رفاقت کے بعد آپ کو احساس ہوتا ہے کہ اس بھلی مانس نے مجھ پر بہت احسان کئے… میری بے راہرو حیات کو برداشت کیا… کبھی شکایت نہ کی یہاں تک کہ ڈانٹ ڈپٹ وغیرہ بہت کی تو بس یہی عشق میں مبتلا ہونے کے لائق ہے. ہمارے ایک دوست کا کہنا ہے کہ جوانی میں بیویایک آنکھ نہ بھاتی تھی، مرد تو آخر مرد ہوتا ہے دل میں خیال آتا تھا کہ اگر یہ مر جائے تو سبحان اللہ میں دوسری شادی کر لوں… جوانی میں اپنی بیویوں سے محبت کرنے والے لوگ ،، ہمیشہ دوسری شادی کرتے ہیں…

آزمائش شرط ہے… چونکہ میں نے اپنی بیوی سے جوانی میں محبت نہیں کی اس لئے میں نے دوسری شادی بھی نہیں کی. ویسے اس عمر میں آ کر اپنی بیگم کے عشق میں مبتلا ہو کر اُس کے ساتھ فلرٹ کرنا ، موج مستی کرنا نہایت ہی شاندار تجربہ ہے. میں اُسے ’’جانے من‘‘ یا ’’سویٹ ہارٹ یا ڈاڑلنگ‘‘ کہتا ہوں تو وہ ناک چڑھا کر کہتی ہے ’’دفع‘‘، کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کیجئیے 

اپنا تبصرہ بھیجیں