کسی کے مسیجز پڑھنا شرعا جائز نہیں‌ہے .

ہمارے مذہب میں‌عبادات کے ساتھ جس چیز پر زور دیا گیا ہے وہ ہے حسن اخلاق اور معاشرتی نیک برتاؤ . ان میں‌سے ایک خلق جس کے بارے میں اکثر لوگوں‌کی سچ نہیں‌ہوتی اور نہ ہی اس کا خیال کرتے ہیں‌وہ ہے کسی کے اجازت کے بغیر اس کی چیز کا استعمال . جوکہ شرعا ناجائز ہے . حتی کہ فقہاء فرماتے ہیں کہ شوہر کو بھی اجازت نہیں‌کہ وہ اپنی بیوی کی کوئی چیز اس

کی اجازت کے بغیر استعمال کریں ، آج کل چونکہ موبائل کا دور ہے جس میں‌ہر شخص‌کے پاس کافی سارے لوگوں‌کے مسیجز ہوتے ہیں‌. تو لوگوں کی عجیب عادت ہے کہ جیسے ہی دوسرے کا موبائل ہاتھ میں‌آتا ہے تو فورا مسیجز پڑھنے لگ جاتے ہیں‌یا پھر اگر کیمرے والا موبائل ہے تو اس کے ساتھ ہی گیلیری کھول لیتے ہیں‌کہ دیکھیں‌اس میں‌کیا ہے ممکن ہے کہ اس میں‌گھر کی

تصاویر ہو . اس کو دیکھنا ہی گنا ہے . اور قیامت کے روز اللہ اس کے بارے میں‌ضرور سوال کریں گے کہ میرے بندے کے بارے میں‌تم نے راز کیوں کھولے .

https://www.youtube.com/watch?v=8-zrKEo_D1s 

اپنا تبصرہ بھیجیں